5 Waqt Ki Namaz Me Kitni Rakat Hai ! How Many Rakats In Prayer ! Namaz Padhne Ka Sahi Tarika | Namaz ki rakat in Urdu | نماز کے فرائض و واجبات، سنن و مکروہات |

5 waqt ki Namaz ka tarika

5 Waqt Ki Namaz Me Kitni Rakat  Hai ! How Many Rakats In Prayer ! Namaz Padhne Ka Sahi Tarika |  Namaz ki rakat in Urdu | نماز کے فرائض و واجبات، سنن و مکروہات |


۲۰ وَعَنْ عِبَادَۃُ بْنِ الصَّامِتِ ؓ قَالَ قَالَ رَسَوْلُ اللّٰہِ ﷺ خَمْسُ صَلَوَاتِ نِ افْتَرَضَھُنَّ اللّٰہُ تَعَالیٰ مَنْ اَحْسَنَ وُضُوْئَ ھُنَّ وَصَلَّا ھُنَّ لِوَقْتِھِنَّ وَاَتَمَّ رُکُوْعَھُنَّ وَخُشُوْعَھُنَّ کَانَ لَہٗ عَلَی اللّٰہِ عَھْدٌ اَنْ یَّغْفِرَلَہٗ وَمَنْ لَّمْ یَفْعَلْ فَلَیْسَ لَہٗ عَلَی اللّٰہِ عَھْدٌ اِنْ شَآئَ غَفَرَلَہٗ وَاِنْ شَآئَ عَذَّبَہٗ۔ (رواہ احمد و ابوداود)

عباد

 پانچ نمازوں کی فرضیت اور ان کے اوقات و رکعات:

ہ بن صامتؓ سے روایت ہے کہ حضور اقدسﷺ نے ارشاد فرمایا کہ پانچ نمازیں اللہ تعالیٰ نے فر ض فرمائی ہیں، جس نے ان نمازوں کا وضو اچھی طرح کیا اور ان کو بروقت پڑھا،

ان کا رکوع اور سجدہ پوری طرح ادا کیا تو اس کے لیے اللہ تعالیٰ کے ذمہ یہ عہد ہے کہ اللہ تعالیٰ اس کو بخش دے گا اور جس نے ایسا نہ کیا تو اس کے لیے اللہ کے ذمہ کوئی عہد (بخشش کا) نہیں۔ چاہے بخشے، چاہے عذاب دے۔ (مشکوٰۃ المصابیح ص ۵۸، از احمد و ابوداود)

تشریح: اس حدیث سے معلوم ہوا کہ اللہ جل شانہٗ نے پانچ نمازیں فرض فرمائی ہیں اور اس میں کسی مسلمان کا اختلاف بھی نہیں ہے، جو پانچ نمازوں کی فرضیت کامنکر ہو وہ کافر ہے۔ ان پانچوں نمازوں کے اوقات اور رکعات کی تفصیلات ذیل کی جاتی ہیں۔ نیز نماز کے فرائض و واجبات وغیرہ لکھے جاتے ہیں۔ اس کے بعد طریقہ نماز لکھیں گے۔ (ان شاء اللہ تعالیٰ)

اوقات نماز پنج گانہ: فجر کا وقت صبح صادق ہوتے ہی شروع ہوجاتا ہے اور طلوع آفتاب شروع ہونے تک باقی رہتا ہے اور ظہر کا وقت سورج ڈھل جانے کے بعد سے شروع ہوجاتا ہے اور جب تک ہر چیز کا سایہ اس سے دوگنا نہ ہو اس وقت تک باقی رہتا ہے۔ دو چند سایہ سے مراد اصلی سایہ کے علاوہ ہے۔ اصلی سایہ وہ ہے جو عین زوال کے وقت ہوتا ہے۔ ظہر کا وقت ختم ہونے کے بعد عصر کا وقت شرو ع ہوجاتا ہے اور سورج چھپنے تک باقی رہتا ہے۔ لیکن جب سورج زرد ہوجائے تو عصر کا وقت مکروہ ہوجاتا ہے۔ جب سورج چھپ جائے تو مغرب کا وقت شروع ہوجاتا ہے جو سفید شفق غائب ہونے تک باقی رہتاہے، ہند و پاکستان کے علاقوں میں کم از کم سوا گھنٹہ اور زیادہ سے زیادہ ڈیڑھ گھنٹہ مغرب کا وقت رہتاہے۔ مغرب کا وقت ختم ہوتے ہی عشاء کا وقت شروع ہوجاتا ہے جو صبح صادق تک رہتا ہے۔ لیکن آدھی رات کے بعد عشاء کا وقت مکروہ ہوجاتا ہے۔

mجو وقت عشاء کا ہے وہی نماز وتر کا بھی ہے۔ مگر وتر کی نماز عشاء کے فرضوں سے پہلے نہیں پڑھی جاسکتی۔

Namaz ki rakat in Urdu

نماز کے فرائض و واجبات، سنن و مکروہات

Namaz Ke Faraiz Aur Wajibat In Urdu Pdf | How many wajibat in namaz | How many FARZ are there in salat

فرائض نماز: نماز کے چودہ فرض ہیں، جن میں سے چند ایسے ہیں جن کا نماز سے پہلے ہونا ضروری ہے اور ان کو نمازی کے خارجی فرائض بھی کہتے ہیں اور شرائط نماز بھی کہا جاتا ہے اور چند فرائض ایسے ہیں جو داخل نماز ہیں، سب کی فہرست یہ ہے۔

۱۔ بدن پاک ہونا۔ ۲۔ کپڑوں کا پاک ہونا۔

۳۔ ستر عورت یعنی مردوں کو ناف سے گھٹنوں تک اور عورتوں کو چہرے اور ہتھیلیوں اور قدموں کے علاوہ تمام بدن کا ڈھکنا فرض ہے

۴۔ نماز کی جگہ کا پاک ہونا۔ ۵۔ نماز کا وقت ہونا۔

۶۔ قبلہ کی طرف رخ کرنا۔ ۷۔ نماز کی نیت کرنا۔

۸۔ تکبیر تحریمہ۔ ۹۔ قیام یعنی کھڑا ہونا۔

۱۰۔ قرات یعنی ایک بڑی آیت یا تین چھوٹی آیتیں یا ایک چھوٹی سورت پڑھنا۔

۱۱۔ رکوع کرنا۔ ۱۲۔ سجدہ کرنا۔

۱۳۔ قعدۂ اخیرہ۔

۱۴۔ اپنے ارادہ سے نماز ختم کرنا، اگر ان میں سے کوئی چیزبھی جان کر یا بھول کر رہ جائے تو سجدۂ سہو کرنے سے بھی نماز نہ ہوگی۔

واجبات نماز: ذیل کی چیزیں واجب ہیں۔

۱۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ پڑھنا۔ ۲۔اور اس کے ساتھ کوئی سورت ملانا۔

۳۔فرضوں کی پہلی دو رکعتوں میں قرات کرنا۔

۴۔ الحمد کو سورت سے پہلے پڑھنا۔ ۵۔ رکوع کرکے سیدھا کھڑا ہونا۔

۶۔ دونوں سجدوں کے درمیان بیٹھنا۔ ۷۔پہلا قعدہ کرنا۔

۸۔ التحیات پڑھنا۔ ۹۔ لفظ سلام سے نماز ختم کرنا۔

۱۰۔امام کے لیے مغرب و عشاء کی پہلی دو رکعتوں میں اور فجر و جمعہ و عیدین اور تراویح کی سب رکعتوں میں قرات بلند آواز کے ساتھ پڑھنا۔

۱۱۔ وتر میں دعائے قنوت پڑھنا۔ ۱۲۔عیدین میں چھ زائدتکبیریں کہنا۔

واجبات میں سے اگر واجب بھول کر چھوٹ جائے تو سجدۂ سہو کرنا واجب ہوگا۔ اگر قصداً کسی واجب کو چھوڑ دیا جائے تو دوبارہ نماز پڑھنا واجب ہے۔ سجدۂ سہو سے بھی کام نہ چلے گا۔ (سجدہ سہو کا بیان آگے آئے گا۔ ان شاء اللہ تعالیٰ)

مفسدات نماز: ان چیزوں سے نماز فاسد ہوجاتی ہے۔

۱۔ بات کرنا، تھوڑی یا بہت، قصداً یا بھول کر۔

۲۔ سلام کرنا یا سلام کا جواب دینا۔ ۳۔ چھینکنے والے کے جواب میں یرحمک اللہ کہنا۔

۴۔ رنج کی خبر سن کر إِنَا لِلّٰہِ وَإِنَّا إِلَیْہِ رَاجِعُوْنَ پورا یا تھوڑا سا پڑھنا۔ یا اچھی خبر سن کر اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ کہنا یا عجیب چیزسن کر سُبْحَانَ اللّٰہِ کہنا۔

۵۔ دکھ تکلیف کی وجہ سے آہ، اوہ یا اف کرنا۔

۶۔ قرآن شریف دیکھ کر پڑھنا۔

۷۔ الحمد شریف یا سورت وغیرہ میں ایسی غلطی کرنا جس سے نماز فاسد ہوجاتی ہے۔ (جس کی تفصیل بڑی کتابوں میں لکھی ہے)

۸۔ عمل کثیر مثلاً ایسا کرنا، جسے دیکھنے والا یہ سمجھے کہ یہ شخص نماز نہیں

Spread the love

Leave a Comment

%d bloggers like this: