Chain Wali Ghadi Pehan Kr Namaz Padhna ! Orten Artificial Ring Pehn Ker Namaz Perh ! Namaz in artificial jewellery | Namaz Ke Masail | کیا چین والی گھڑی پہن کر نماز پڑھ سکتے ہیں

 انگوٹھی پہننے کے آداب ،اور لوہے اور تانبے کی انگوٹھی 

Chain Wali Ghadi Pehan Kr Namaz Padhna

Chain Wali Ghadi Pehan Kr Namaz Padhna ! Orten Artificial Ring Pehn Ker Namaz Perh !  Namaz in artificial jewellery | Namaz Ke Masail | کیا چین والی گھڑی پہن کر نماز پڑھ سکتے ہیں


مسلمان مردوں کی طرح خواتین کے لیے بھی آنحضور ﷺکا اسوئہ مبارکہ ہی قابلِ تقلید ہے انگوٹھی کے سلسلہ میں آپ ﷺنے عورتوں کو مردوں سے ممتاز ہدایات نہیں دیں ،اس لیے آپ ﷺکی عاداتِ طیّبہ ہی ان کے لیے نمونہ ہیں ،اور ہم موت کی دہلیز تک آقاﷺکے غلام ہیں اور رہیں گے

میں ہوں اور حشر تک اس در کی جبیں سائی ہے سرِ زاہد نہیں ،یہ سرسرِ سودائی ہے

(۱) آنحضرت ﷺدائیں اور بائیں دونوں ہاتھوں میں انگوٹھی پہنی ہے امام ابودائود رحمۃاللہ علیہ نے مستقل باب قائم کر کے ثابت کیاہے کہ دائیں ہاتھ میں انگوٹھی پہنی جائے تو بہتر ہے کیونکہ بایاں ہاتھ استنجاء وغیرہ کے لیے استعمال ہوتاہے لہٰذا بہتر ہے کہ دائیں میں پہنی جائے ۔ (۲) اگر انگوٹھی میں کوئی مقدّس نام رقم ہو تو اسے اتار کر بیت الخلاء میں جائیں ۔(۳) شمائلِ کبرٰی میں ابن ماجہ کے حوالے سے ہے کہ آپ ﷺانگوٹھی کا نگینہ ہتھیلی کی طرف رکھتے تھے تاکہ ریاکاری اور تکبّر کا ذریعہ نہ ہو امام بخاری رحمۃ اللہ علیہ نیباب الخاتم فی الخنصرقائم کر کے ترجیح اس بات کو دی ہے کہ چھوٹی انگلی میں انگشتری پہنی جائے ۔تاکہ کم قیمت بھی ہو اور ایک طرف ہونے کی وجہ سے کاموں میں حرج بھی نہ ہو ۔یہ سنّت کی ایک حکمت ہے جو سمجھا دی گئی ورنہ ایک مسلمان جو عاشقِ صادقِ نبی ﷺہو اُسے تو حکمِ رسول ﷺہی کافی ہے۔ ؎

تدبیر کو مزاجِ مَحبّت میں دخل کیا ؟ جانکاہ اس مرض کی نہ کوئی دواکرو

Salaah with Artificial Ring

دنیائے کفر نے اپنی تمام ترسائنسی معلومات و تحقیقات کے بعد یہ بھی تسلیم کر رکھا ہے کہ طبیبِ اعظم ﷺکے بنائے گئے نفع ونقصان کے اُصولوں کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ فرمانِ رسول ﷺمیں جب لوہے اور تانبے کی انگوٹھی سے منع کر دیا گیا ہے تو ہم مسلمانوں کو یہ یقین کرنا چاہیے کہ یہ دونوں دھاتیں بطور انگوٹھی نہ مرد کے لیے دُرست اورنہ عورت کے لیے ۔نبی ﷺنے ایک شخص سے جو پیتل کی انگوٹھی پہنے ہوئے تھا ، فرمایا:کہ کیا بات ہے مجھے تمہارے پاس سے بتوں کی بو آرہی ہے ؟(کیونکہ بت عام طور سے پیتل سے بھی بنائے جاتے ہیں )اس فرمان پراس شخص نے وہ انگوٹھی (اتارکر) پھینک دی ، پھر وہ دوبارہ آیا تو (اب ) وہ لوہے کی انگوٹھی پہنے ہوئے تھا ،تو آپ ﷺنے فرمایا:کہ کیابات ہے کہ میں تمہیں جہنّمیوں کازیورپہنے دیکھ رہاہوں ؟(مطلب یہ تھا کہ مسلمان کو ان چیزوں کی انگوٹھی پہننا جائز نہیں ) اس شخص نے وہ انگوٹھی (بھی اتار کر ) پھینک دی اور پوچھا :اے اللہ کے رسول!میں کس چیز کی انگوٹھی پہنوں ؟آپ ﷺنے فرمایا: چاندی کی (انگوٹھی پہن سکتے ہو ) لیکن مثقال پورا نہ ہو (یعنی ساڑھے چار ماشے سے کم ہی رہے )اُسے پہن لو

کیا چین والی گھڑی پہن کر نماز پڑھ سکتے ہیں 

Namaz in artificial jewellery

اگر کوئی آدمی چین والی گھڑی پہن کر نماز پڑھ لی تو کیا اس کی نماز ادا ہو جائے گی یا نہیں ہوگی کچھ لوگ کہتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے لوہے تانبے سے بنائے فرمایا ہے کیا گھڑی بھی اس زمرے میں آتی ہے حلقہ گھڑی تو ضرور ہےاس کو ہم ضرورت کے لئے استعمال کرتے ہیں 

جواب 

گھڑی پہن کر نماز پڑھنے میں کوئی حرج نہیں ہے لوہا تانبع اگر زیب و زینت کے لیے استعمال کیا جائے تو منع ہے اس لئے جو گھڑی پہنی جاتی ہے جو اس کی چین  ہے مقصد چین پہننا نہیں ہوتا مقصد ٹائم دیکھنا ہوتا ہے اس لیے با تفاق چین والی گھڑی پہننا اور اس میں نماز پڑھنا جائز ہے 

Spread the love

Leave a Comment

%d bloggers like this: