Maqrooz Par Qurbani Farz He Ya Nahi | Qarz Le Kar Qurbani Kr Sakte Hain | Qurbani Ke Masile | قرض دینے والے پر قربانی

 قرض لے کر قربانی


Maqrooz Par Qurbani Farz He Ya Nahi | Qarz Le Kar Qurbani Kr Sakte Hain | Qurbani Ke Masile | قرض دینے والے پر قربانی


 اگر کسی شخص کی ملکیت میں اس کی ضرورت سے زائد، نصاب کے بقدر مال ہو، یا نقد روپیہ ہو، لیکن وہ کہیں غائب ہو، یا کسی کو قرض دے رکھا ہو، او رقربانی کے دنوں میں اس کی وصولی اور ملنا ممکن نہ ہو، اور اس کے پاس اتنا بھی مال نہ ہو، جس سے وہ قربانی کا جانور خرید سکے، تو اس پر قربانی واجب نہیں ہوگی، اور نہ ہی اس پر قرض لے کر قربانی کرنا لازم ہوگا، کیوں کہ مال کی عدمِ موجودگی کی وجہ سے وہ فقیر کے حکم میں ہے

قربانی سے متعلق مسائل

مقروض شخص پر قربانی

اگر کسی آدمی کے اوپر قرض ہو، لیکن اس کے پاس کچھ مال بھی ہو، تو اگر یہ مال اتنا ہو کہ قرض ادا کرنے کے بعد بھی اس کے پاس بنیادی ضرورت سے زائد ، نصاب کے بقدر یعنی ساڑھے باون تولہ چاندی کی قیمت کے برابر مال بچ رہتا ہے، تو ایسے شخص پر قربانی واجب ہوگی، او راگر قرض ادا کرنے کے بعد نصاب سے کم مال بچے، تو اس پر قربانی واجب نہیں ہوگی

قربانی کے لیے بڑا جانور ضروری نہیں


گر کسی شخص کی ملکیت میں ضرورت سے زائد اتنامال ہے، جس سے اُس پر قربانی واجب ہوجاتی ہے، لیکن اُس کے پاس نقد رقم نہیں ہے، تو اُس پر واجب ہے کہ قرض لے کر قربانی کرے، جیسا کہ اپنی دوسری ضروریات کے لیے قرض لیتا ہے، البتہ سودی قرض لینے سے اجتناب کرے، نیز یہ بات بھی سمجھ لینا چاہیے کہ واجب قربانی کے اپنے ذمہ سے ساقط ہونے کے لیے پورا ایک بڑا جانور خریدنا ضروری نہیں ہے، بلکہ اس میں سے ایک حصہ لے لینے سے بھی یہ واجب ادا ہوجاتا ہے

I Covered these points in the video

> qurbani

> qurbani ke masail

> maqrooz par qurbani

> maqrooz ki qurbani

> qurbani kis par wajib hai

> makrooz par qurbani

> maqrooz or qurbani

> maqrooz par qurbani hai

> maqrooz shakhs par qurbani

Spread the love

Leave a Comment

%d bloggers like this: